Teesri Ashray Ki Dua

Teesri Ashray Ki Dua

 تیسری اشرے کی دعا:

 

تیسری اشرے کی دعا

 

تیسری پناہ کی تلاش کی طاقت

 

 تعارف:

اسلام میں اللہ سے پناہ مانگنا ایمان کا ایک لازمی پہلو ہے۔ مسلمانوں کا عقیدہ ہے کہ اللہ کی پناہ مانگ کر وہ اپنے آپ کو دنیا کے شر سے بچا سکتے ہیں اور راہ راست پر قائم رہ سکتے ہیں۔ اللہ کی پناہ حاصل کرنے کا ایک اہم ترین طریقہ تیسری اشرے کی دعا یا تیسری پناہ کی تلاش کے لیے دعا پڑھنا ہے۔ یہ مضمون اس دعا کے معنی اور اہمیت پر روشنی ڈالے گا۔

 

 تیسری عشرے کی دعا کا معنی:

تیسری اشرے کی دعا ایک طاقتور دعا ہے جسے مسلمان اللہ کی پناہ مانگنے کے لیے پڑھتے ہیں۔ دعا درج ذیل الفاظ پر مشتمل ہے:

 

 عَوْدُ بِکَالِمَاتِلَ لَہِتَ مِنْ شَرِیْ مَا خلقا۔

 

 ترجمہ: میں اللہ کے کامل کلمات کی پناہ مانگتا ہوں اس چیز کے شر سے جو اس نے پیدا کی ہے۔

 

 تیسری عشرے کی دعا کی اہمیت:

اسلام میں تیسری عشرے کی دعا کی اہمیت کی چند وجوہات یہ ہیں:

 

 برائی سے حفاظت:

دعا اللہ کی پیدا کردہ چیزوں کے شر سے پناہ مانگتی ہے۔ اس سے مسلمانوں کو ہر اس چیز سے دور رہنے میں مدد ملتی ہے جو انہیں جسمانی یا روحانی طور پر نقصان پہنچا سکتی ہے۔

 

 اللہ کی قدرت کی یاد دلاتا ہے:

تیسری اشرے کی دعا مسلمانوں کو اللہ کی قدرت اور طاقت کی یاد دلاتی ہے۔ دعا کی تلاوت کرنے سے، ایک یہ تسلیم کرتا ہے کہ اللہ حتمی محافظ ہے اور اس کی اجازت کے بغیر کوئی چیز انہیں نقصان نہیں پہنچا سکتی۔

 

 

 ایمان پیدا کرتا ہے:

اس دعا کو باقاعدگی سے پڑھنے سے اللہ پر یقین اور بھروسہ مضبوط ہوتا ہے۔ اس سے مسلمانوں کو یہ اعتماد ملتا ہے کہ اللہ ان کی حفاظت اور رہنمائی کے لیے ہمیشہ موجود ہے۔

 

 نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف سے تجویز کردہ:

نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے تیسری عشرے کی دعا کو اللہ کی حفاظت کے لیے سب سے مؤثر دعاؤں میں سے ایک کے طور پر تجویز کیا ہے۔

 

 تیسری اشرے کی دعا پڑھنے کا طریقہ:

تیسری اشرے کی دعا پڑھنے کے اقدامات یہ ہیں:

 

 وضو کریں اور قبلہ کی طرف منہ کریں۔

 

 دونوں ہاتھوں کو کندھوں کی سطح تک اٹھائیں.

 

 دعا “عوذ بِکَلِیْمَا تَلْحَمْتَ مِنْ شَرِیْ مَا خلِقَا

تین بار پڑھیں۔

 

 دعا پڑھنے کے بعد اپنے ہاتھ نیچے لائیں اور ان سے اپنے چہرے کا مسح کریں۔

 

 نتیجہ:

اسلام میں راہِ راست پر قائم رہنے اور اپنے آپ کو نقصان سے بچانے کے لیے اللہ کی پناہ مانگنا بہت ضروری ہے۔ تیسری اشرے کی دعا اللہ کی حفاظت کے لیے سب سے طاقتور دعاؤں میں سے ایک ہے۔ اس دعا کو باقاعدگی سے پڑھنے سے مسلمان اپنا ایمان اور اللہ پر بھروسہ مضبوط کر سکتے ہیں اور دنیا کے شر سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔

 

 

English

 

 

Introduction

 

In Islam, seeking refuge in Allah (SWT) is an essential aspect of our faith. We find solace and protection in His divine presence, especially during times of difficulty and uncertainty. One such prayer that holds immense significance is the “Teesri Ashray Ki Dua” or the “Prayer for the Third Shelter.” This prayer serves as a powerful reminder of our reliance on Allah’s mercy and guidance. In this article, we will explore the meaning and significance of this prayer and how it can bring us closer to our Creator.

 

Understanding the Teesri Ashray Ki Dua

 

The Teesri Ashray Ki Dua is a supplication that seeks refuge in Allah (SWT) from the trials and tribulations of the world. It is recited as a means of seeking protection from the evil eye, jealousy, and harm caused by others. The prayer is a reminder that our ultimate reliance should be on Allah alone, as He is the ultimate source of strength and guidance.

 

Meaning and Significance

 

The Teesri Ashray Ki Dua is derived from a Hadith narrated by Abu Dawood, where the Prophet Muhammad (peace be upon him) sought refuge in Allah from the evil of others. The prayer is as follows:

 

أَعُوذُ بِكَلِمَاتِ اللَّهِ التَّامَّاتِ مِنْ شَرِّ مَا خَلَقَ

 

“I seek refuge in the perfect words of Allah from the evil of what He has created.”

 

This prayer is a powerful reminder that Allah’s words are a shield against all forms of harm. By reciting this supplication, we acknowledge our vulnerability as human beings and seek Allah’s protection from the negative influences that may surround us.

 

The Third Shelter

 

The term “Teesri Ashray” refers to the third level of seeking refuge in Allah. It signifies that after seeking refuge in Allah from the evil of our own selves and the evil of the world, we now seek refuge from the evil of others. This level of refuge highlights the importance of recognizing that harm can come from those around us, and we must turn to Allah for protection.

 

Application in Daily Life

 

Reciting the Teesri Ashray Ki Dua regularly can have a profound impact on our spiritual well-being. It serves as a reminder to place our trust in Allah and seek His protection from the negative energies that may affect us. By reciting this prayer, we acknowledge our dependence on Allah’s mercy and guidance, and we affirm our belief that He is the ultimate source of strength and protection.

 

Conclusion

Teesri Ashray Ki Dua

The Teesri Ashray Ki Dua is a powerful supplication that reminds us of our reliance on Allah’s protection from the harm caused by others. By seeking refuge in Allah, we acknowledge our vulnerability as human beings and affirm our belief in His ultimate power and guidance. In times of difficulty and uncertainty, reciting this prayer can provide us with solace, strength, and a sense of security. Let us embrace this prayer as a means to deepen our connection with Allah and seek His shelter in all aspects of our lives.

I've been a professional blogger and content writer since 2020. I've worked on over 25 different blogs and currently lead Team Mentor. If you want to know more about me, click on the three dots