Hichki ka ilaj in Urdu

Hichki ka ilaj in Urdu

 

Hichki ka ilaj in Urdu

 

  • ہچکی کے علاج کے مؤثر طریقے

 

 ہچکی یا ہچکی ڈایافرام کے پٹھوں کا غیر ارادی طور پر سنکچن ہیں۔ وہ عام طور پر بے ضرر ہوتے ہیں اور چند منٹوں میں خود ہی چلے جاتے ہیں۔ تاہم، ہچکی جو طویل عرصے تک برقرار رہتی ہے وہ پریشان کن اور تکلیف دہ ہو سکتی ہے۔ ہچکی کے علاج کے کچھ موثر طریقے یہ ہیں:

 

 پانی پینا

ایک گلاس پانی پینے سے ہچکی کو روکنے میں مدد مل سکتی ہے۔ پانی وگس اعصاب کو متحرک کرنے میں مدد کرسکتا ہے، جو ڈایافرام کے پٹھوں کو کنٹرول کرنے میں کردار ادا کرتا ہے۔

 

 اپنی سانس کو روکنا

اپنی سانس کو روکنا ڈایافرام کے پٹھوں کو آرام دینے اور ہچکی کو روکنے میں مدد کر سکتا ہے۔ ایک گہرا سانس لیں اور اسے جتنی دیر ہو سکے روکے رکھیں۔ آہستہ آہستہ سانس چھوڑیں اور اگر ضروری ہو تو دہرائیں۔

 

 لیموں کو کاٹنا

لیموں کا کھٹا ذائقہ ڈایافرام کے پٹھوں کو کنٹرول کرنے والے اعصاب کو متحرک کرنے میں مدد کرتا ہے۔ لیموں کا ایک چھوٹا ٹکڑا لیں اور اس میں کاٹ لیں، جس سے رس آپ کے منہ میں جائے گا۔

 

 برف کے پانی سے گارگلنگ

برف کے پانی سے گارگلنگ ان اعصاب کو متحرک کرنے میں مدد کر سکتی ہے جو ڈایافرام کے پٹھوں کو کنٹرول کرتے ہیں۔ برف کے پانی کا ایک گھونٹ لیں اور تھوکنے سے پہلے اسے اپنے گلے کے پچھلے حصے میں چند سیکنڈ تک گارگل کریں۔

 

 بھوسے کا استعمال

ایک بھوسے میں پانی گھونپنے سے آپ کی سانس لینے کو منظم کرنے اور ڈایافرام کے پٹھوں کو آرام دینے میں مدد مل سکتی ہے، جو ہچکی کو روکنے میں مدد کر سکتی ہے۔

 

 کیروٹڈ شریان کی مالش کرنا

گردن میں واقع کیروٹڈ شریان کی مالش وگس اعصاب کو متحرک کرنے اور ہچکیوں کو روکنے میں مدد کر سکتی ہے۔ اپنی گردن کے ایک طرف کی شریان کو چند سیکنڈ کے لیے آہستہ سے مساج کریں، پھر دوسری طرف سوئچ کریں۔

 

 چینی نگلنا

ایک چمچ چینی نگلنے سے ڈایافرام کے پٹھوں کو کنٹرول کرنے والے اعصاب کو متحرک کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔ اس سے ہچکی کو روکنے میں مدد مل سکتی ہے۔

 

 کاغذ کے تھیلے میں سانس لینا

کاغذ کے تھیلے میں سانس لینے سے آپ کی سانس لینے کو منظم کرنے اور ڈایافرام کے پٹھوں کو آرام دینے میں مدد مل سکتی ہے، جس سے ہچکی کو روکنے میں مدد مل سکتی ہے۔

 

 گہری سانسیں لینا

گہری سانسیں لینے سے آپ کی سانسوں کو منظم کرنے اور ڈایافرام کے پٹھوں کو آرام دینے میں مدد مل سکتی ہے، جس سے ہچکی کو روکنے میں مدد مل سکتی ہے۔ گہرائی سے سانس لیں اور آہستہ آہستہ سانس چھوڑیں اور ہچکی بند ہونے تک دہرائیں۔

 

 ایکیوپنکچر کا استعمال

ایکیوپنکچر میں جسم پر مخصوص پوائنٹس میں پتلی سوئیاں ڈالنا شامل ہے۔ یہ ہچکی کے علاج میں موثر ثابت ہوا ہے۔

 

 ان علاجوں کے علاوہ، طرز زندگی میں کچھ تبدیلیاں بھی ہیں جو آپ ہچکی کو روکنے میں مدد کے لیے کر سکتے ہیں:

 کاربونیٹیڈ مشروبات سے پرہیز

کاربونیٹیڈ مشروبات پیٹ کو پھیلا کر اور ڈایافرام کے پٹھوں کو سکڑنے کی وجہ سے ہچکی کا سبب بن سکتے ہیں۔

 

 آہستگی سے کھانا

بہت جلدی کھانے سے معدے کو پھیلنے اور ڈایافرام کے پٹھوں کے سکڑنے کی وجہ سے ہچکی لگ سکتی ہے۔

 

 مسالیدار یا چکنائی والی غذاؤں سے پرہیز: مسالہ دار یا چکنائی والی غذائیں معدے میں جلن اور ہچکی کا سبب بن سکتی ہیں۔

 

 الکحل سے پرہیز

الکحل پیٹ میں جلن اور ہچکی کا سبب بن سکتا ہے۔

 

 تناؤ کا انتظام

تناؤ ڈایافرام کے پٹھوں کو سکڑنے کی وجہ سے ہچکی کا سبب بن سکتا ہے۔ آرام کی تکنیکوں پر عمل کرنا جیسے کہ گہرے سانس لینے، مراقبہ یا یوگا کرنے سے تناؤ کو کم کرنے اور ہچکیوں کو روکنے میں مدد مل سکتی ہے۔

 

 نتیجہ

 

 ہچکی یا ہچکی پریشان کن اور تکلیف دہ ہوسکتی ہے، لیکن یہ عام طور پر بے ضرر ہوتی ہیں اور خود ہی ختم ہوجاتی ہیں۔ تاہم، ہچکی جو طویل عرصے تک برقرار رہتی ہے وہ بنیادی طبی حالت کی علامت ہو سکتی ہے اور صحت کی دیکھ بھال فراہم کرنے والے کے ذریعہ اس کا جائزہ لینا چاہیے۔ اگر آپ کو ہچکی لگتی ہے، تو آپ ان کو روکنے میں مدد کے لیے گھر پر کئی علاج آزما سکتے ہیں، بشمول پانی پینا، سانس روکنا، لیموں کاٹنا۔

 

 

Disclaimer: The information provided in this article is for educational purposes only and should not be considered as a substitute for professional medical advice, diagnosis, or treatment. Always seek the advice of your physician or qualified healthcare provider with any questions you may have regarding a medical condition. Never disregard professional medical advice or delay in seeking it because of the information contained in this article.

I've been a professional blogger and content writer since 2020. I've worked on over 25 different blogs and currently lead Team Mentor. If you want to know more about me, click on the three dots